loader

ایف بی آر نے7 ماہ میں 345 ارب سے زائد وصولیاں کرلیں۔

  • Created by: editor
  • Published on: 09 Mar, 2020
  • Category: Business / Business
  • Posted By: Editor

Post Info

ایف بی آر نے7 ماہ میں 345 ارب کی زائد وصولیاں کرلیں، ایف بی آر کو7 ماہ میں 2509 ارب کے ہدف کے مقابلے میں2407.7 ارب کے ٹیکس اکٹھے ہوئے، یہ وصولیاں گزشتہ سال کے مقابلے میں16.7فیصد زائد رہیں۔ ترجمان ایف بی آر کے مطابق ایف بی آر کو جنوری تک ریونیو کی مد میں17 فیصد زائد وصولیاں ہوئیں۔ جولائی سے جنوری تک 345 ارب کی زائد وصولیاں ہوئیں۔ پہلے7 ماہ میں920 ارب کے ہدف کے مقابلے میں897.5 ارب کا انکم ٹیکس اکٹھا ہوا۔ یہ انکم ٹیکس وصولیاں گزشتہ سال کی759.1 ارب کے مقابلے میں18.1فیصد زائد رہیں۔ اس عرصہ میں1039 ارب کی سیلزٹیکس وصولیوں کے ہدف کے مقابلے میں996.6 ارب اکٹھے ہوئے۔ سیلزٹیکس کی مد میں گزشتہ سال کی799.1 ارب کے مقابلے میں24.7 فیصد زائد اکٹھے ہوئے۔ترجمان نے بتایا کہ ایف بی آر کو7 ماہ میں2509 ارب کے ہدف کے مقابلے میں2407.7 ارب کے ٹیکس اکٹھے ہوئے۔ یہ ٹیکس وصولیاں گزشتہ سال کے2062.7 ارب کے مقابلے میں16.7فیصد زائد رہیں۔ ایف بی آر میں29 فروری تک24 لاکھ 83 ہزار8 سو66 ریٹرنز داخل ہوئیں۔ یہ ریٹرنز گزشتہ سال کے مقابلے میں3 لاکھ 73 ہزار8 سو77 زائد رہیں۔ اسی طرح اندرونی ذرائع سے حاصل کردہ ریونیو 1339 ارب روپے ہے جو کہ پچھلے سال 1057 ارب روپے تھا۔ درآمد کے وقت حاصل کردہ ریونیو میں چھ فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔ ایف بی آر نے اس سال 54 ارب روپے کے اضافی فنڈز جاری کئے ہیں۔ جنوری 2020 تک 131 ارب روپے کے فنڈز جاری کئے جا چکے ہیں جبکہ پچھلے سال 76 ارب روپے جاری کئے گئے تھے۔ فاسٹر نظام کے تحت 6081 کیسز اینیکسچر ایچ کے ساتھ داخل ہوئے جو کہ 37614 ملین روپے کے تھے ان کل کیسز میں سے 4606 کیسز پراسیس ہوئے جو کہ 33364 ملین روپے کے تھے۔ پراسیس ہونے کے بعد 29303 ملین روپے کے فنڈز جاری کر دیئے گئے۔4061 ملین روپے کے کیسز نامکمل معلومات کی بناء پر ملتوی کر دیئے گئے۔ 29 فروری 2020 تک ٹیکس سال 2019 کے لئے گوشوارے جمع کرانے والوں کی کل تعداد 2483866 ہے جبکہ 373877 نئے ٹیکس گزاروں نے ٹیکس جمع کرایا ہے۔ 

Related Posts