loader

تھرپارکر میں آسمانی بجلی گرنے سے 25 افراد جاں بحق۔  

  • Created by: editor
  • Published on: 15 Nov, 2019
  • Category: News / Weather
  • Posted By: Editor

Post Info

پاکستان کی حالیہ تاریخ میں آسمانی بجلی گرنے کا سب سے خوفناک واقعہ، افسوسناک حد تک جانی نقصان، ایمرجنسی نافذ کر دی گئی، سندھ کے مختلف علاقوں میں جمعرات کے روز آسمانی بجلی گرنے کے مختلف واقعات میں 25 افراد لقمہ اجل بن گئے، متاثرہ علاقوں میں رین ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔ تفصیلات کے مطابق سندھ کے کئی علاقوں میں بارش کا سلسلہ جاری ہے اور مختلف علاقوں میں آسمانی بجلی گرنے سے 24 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔ بتایا گیا ہے کہ سندھ کے ضلع تھرپارکر کے مختلف علاقوں میں گزشتہ روزگرج چمک کے ساتھ بارش اور ژالہ باری شروع ہوئی، تیز بارش کے دوران مختلف علاقوں میں آسمانی بجلی گرنے کے واقعات بھی رونما ہوئے۔ بارش کے دوران آسمانی بجلی گرنے کے واقعات تھر کے مختلف دیہات میں رونما ہوئے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ گزشتہ 12 گھنٹوں کے دوران تھرپارکر کے مختلف علاقوں ڈابھی، ڈیپلو، چھاچھرو، میگھے جوتڑ، اکیلو بھیل، مٹھڑاؤ آریسر، گاؤں چچھی، مورا اور رام سینگھانی میں آسمانی بجلی گرنے کے واقعات پیش آئے۔ بتایا گیا ہے کہ تھر کے مختلف دیہات میں بارش کے دوران آسمانی بجلی گرنے سے 6 خواتین سمیت 21 افراد جاں بحق جبکہ درجنوں مویشی بھی ہلاک ہوگئے۔ سب سے زیادہ نقصان ڈابھی، ڈاہلی اور موکیار نامی دیہات میں ہوا ہے، جہاں 8 افراد جاں بحق جب کہ 61 مویشی ہلاک ہوئے ہیں۔ آسمانی بجلی سے جیکب آباد میں 2 جبکہ گھوٹکی میں بھی ایک شخص جاں بحق ہوگیا۔ آسمانی بجلی گرنے اور موسلادھار بارشوں اور ژالہ باری کے بعد سندھ حکومت کے متعلقہ اداروں نے تمام متاثرہ علاقوں کیلئے رین ایمرجنسی نافذ کر دی ہے۔ڈپٹی کمشنر تھر پارکر نے شدید بارشوں کے باعث ضلع میں رین ایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے تمام سرکاری ملازمین کی چھٹیاں منسوخ کردی ہیں، ڈپٹی کمشنر آفس میں کنٹرول روم بھی قائم کردیا گیا ہے۔ آسمانی بجلی سے گرنے سے  متاثر ہونے والے علاقوں میں امدادی کاروائیاں کرنے کا سلسلہ جاری ہے ۔ دوسری جانب محکمہ موسمیات نے آئندہ چند روز کے دوران سندھ کے علاقوں میں مزید بارشیں ہونے کی پیشن گوئی کی ہے۔ 

Related Posts