loader

انڈونیشیا میں طوفانی بارشوں اور سیلاب سے 30 افراد ہلاک۔

  • Created by: editor
  • Published on: 04 Jan, 2020
  • Category: News / Weather
  • Posted By: Editor

Post Info

انڈونیشیا میں طوفانی بارشوں کے بعد مٹی کے تودے گرنے اور سیلاب سے 30 افراد ہلاک ہوگئے۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘ کے مطابق حالیہ چند روز میں آنے والی طوفانی بارشوں کے باعث وسطی جکارتہ میں 3 کروڑ سے زائد افراد متاثر ہوئے۔انڈونیشیا کی ڈیزاسٹر ایجنسی نے خبردار کیا کہ مسلسل بارشوں کے باعث مزید سیلاب اور لینڈ سلائیڈنگ کا خدشہ ہے اور اموات میں بھی اضافہ ہوسکتا ہے۔ڈیزاسٹر ایجنسی کے مطابق لاکھوں مقامی افراد محفوظ مقامات پر نقل مکانی پر مجبور ہوگئے ہیں۔پورے خطے سے نشر ہونے والی تصویروں میں دیکھا جا سکتا ہے کہ گھر اور کارویں کیچڑ سے بھر گئیں جبکہ کچھ لوگ ربر کی چھوٹی چھوٹی کشتیوں یا ٹائر ٹیوبوں کے ذریعے محفوظ مقام پر جارہے ہیں۔شہر کے مضافات بیکسی میں پانی عمارتوں کی دوسری منزل تک پہنچ گیا تھا۔امدادی کارکنوں نے گھروں میں پھنسے افراد کو بچانے کے لیے انفلٹیبل کشتیاں استعمال کیں جن میں بچے اور بزرگ بھی شامل تھے۔انڈونیشیا کی حکومت نے تین روز سے جاری مسلسل بارشوں کو روکنے کے لیے فضاء میں دو طیاروں کو بھیج کر پانی سے لبالب بھرے بادلوں کا زور توڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس ٹیکنالوجی کو کلاؤڈ سیڈنگ کہا جاتا ہے۔ یہ فیصلہ سال کے آخری دنوں سے جاری بارشوں کے اب تک نہ رکنے کے باعث کیا گیا ہے، مسلسل بارشوں سے ندیوں اور دریاؤں میں طغیانی آگئی ہے اور ڈیم ٹوٹ گئے جن کا پانی نشیبی علاقوں میں سیلاب کی صورت داخل ہو رہا ہے۔ محکمہ موسمیات کے ترجمان کا دعویٰ ہے کہ پانی سے بھرے بادل جکارتہ کی جانب بڑھ رہے ہیں۔ ’کلاؤڈ سیڈنگ ٹیکنالوجی‘ کی مدد سے بادلوں میں نمک کا چھڑکاؤ کیا جائے گا جس سے بخارات کے پانی میں تبدیل ہونے کے عمل کو کم کردیا جائے گا اور بارش ایک کے بجائے کئی حصوں میں ہوگی 

Related Posts