loader

سپریم کورٹ نےآرمی چیف کی مدت ملازمت میں 6 ماہ کی توسیع دے دی۔

  • Created by: editor
  • Published on: 29 Nov, 2019
  • Category: News / News
  • Posted By: Editor

Post Info

سپریم کورٹ آف پاکستان نے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق کیس میں سماعت کے بعد مختصر فیصلہ سناتے ہوئے انہیں 6 ماہ کی مشروط توسیع دے دی۔
عدالت میں وفقے کے بعد سماعت شروع ہوئی تو اٹارنی جنرل اور فروغ نسیم عدالت میں پیش ہوئے اور نئی دستاویز پیش کیں۔چیف جسٹس نے کہا کہ انتظار پر معذرت خواہ ہیں، جس کے بعد ججز نے دستاویز کا جائزہ لیا، بعد ازاں مختصر فیصلہ سنایا گیا۔ عدالت کا فیصلہبعدازاں عدالت نے اپنے مختصر فیصلے میں کہا کہ آرمی چیف کی دوبارہ تعیناتی یا توسیع چیلنج کی گئی، حکومت ایک سے دوسرا موقف اپناتی رہی، کبھی دوبارہ تعیناتی کبھی دوبارہ توسیع کا کہا جاتا رہا۔عدالت نے فیصلے میں کہا کہ آئین کے مطابق صدر افواج پاکستان کے سپریم کمانڈر ہیں۔اپنے فیصلے میں عدالت نے کہا کہ 6 ماہ میں قانون سازی تک آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ہی رہیں گے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ آج عدالت کو نئی سمری نوٹیفکیشن پیش کیے گئے، نوٹیکفیشن کے مطابق جنرل باجوہ کو آرمی چیف تعینات کیا گیا، حکومت نے جنرل باجوہ کی نئی تعیناتی 28 نومبر سے دی۔عدالت نے کہا کہ آرمی چیف کو قانون سازی سے مشروط 6 ماہ کی توسیع دی گئی کیونکہ آرمی چیف کی مدت تعیناتی کا قانون میں ذکر نہیں،آرمی چیف کی ریٹائرمنٹ محدود یا معطل کرنے کا بھی کہیں ذکر نہیں۔
فیصلے کے مطابق حکومت، عدالت میں آرٹیکل 243 بی پر انحصار کر رہی ہے اور عدالت نے اسی آرٹیکل سے متعلق قوانین کا جائزہ لیا۔قبل ازیں اس اہم کیس پر سب کی نظریں تھیں کیونکہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت آج رات ختم ہورہی ہے اور حکومت کے پاس یہ آخری موقع تھا کہ وہ ان کی مدت ملازمت میں توسیع کے اقدام پر عدالت کو مطمئن کرے۔عدالت عظمیٰ میں چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس منصور علی شاہ اور جسٹس مظہر عالم پر مشتمل 3 رکنی بینچ نے جیورسٹ فاونڈیشن کے وکیل ریاض حنیف راہی کی جانب سے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے خلاف درخواست پر مسلسل تیسرے روز سماعت کی۔ 

Related Posts