loader

دس ارب ڈالرکے قرضے واپس کیے گئے،جو عمران خان کی حکومت نے نہیں لیے تھے۔ حفیظ شیخ

  • Created by: editor
  • Published on: 28 Dec, 2019
  • Category: Business / Business
  • Posted By: Editor

Post Info

وفاقی مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت غریب اور بزنس مین فرینڈلی ہے،بجٹ کم ہونے کے باوجود غریبوں کی مدد کیلئے بجٹ 100ارب سے بڑھا کر192ارب کردیا، دوسرابزنس کمیونٹی کو سہولیات دیں گے،عمران خان چاہتے ہیں اچھے لوگ اوپرآئیں، عمرا ن خان کا اپنا کوئی بزنس ہے اور نہ وہ بچوں کیلئے بڑابزنس بناناچاہتا ہے۔  انہوں نے آج کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلی حکومت میں ایکسچینج ریٹ کو جان بوجھ کر زیادہ رکھا گیا اور اس پر 25ارب ڈالر پھونک دیے گئے،اس کے اثرات پچھلے پانچ سال میں برآمدات کی گروتھ ریٹ صفر فیصد رہی، صنعتی اور زرعی شعبے کی گروتھ ریٹ نہ ہونے کے برابر ہوئی۔سرکلر ڈیبٹ 12سوارب کے قریب پہنچ گیا۔ ہم نے کئی اقدامات کئے،دوست ممالک ، آئی ایم ایف، اے ڈی بی، ورلڈ بینک کے ذریعے20ارب ڈالر سے زیادہ موبلائز کیا گیا ،اس میں کافی رقم وزیراعظم کے ذاتی وقار اور تعلق کی وجہ سے آئی۔ انہوں نے کہا کہ 10 ارب ڈالرکے قرضے واپس کیے گئے،جو عمران خان کی حکومت نے نہیں لیے تھے۔ ایکسچینج ریٹ کو دوبارہ تشکیل دیا گیا، تاکہ برآمدات کو دنیا میں بیچنے میں آسانی ہو۔حکومت کا 40ارب بجٹ کم کیا گیا،ملٹری کے بجٹ کو فریزکیا گیا۔یہ تاریخی اقدامات اٹھائے گئے، ہم نے طے کیا کہ اسٹیٹ بینک سے ادھارنہیں لیں گے، چھ مہینے ہوگئے ہیں اسٹیٹ بینک سے کوئی ادھا نہیں لیا گیا۔
ہم نے کہا کہ بجٹ کم ہونے کے باوجود ہم دوجگہوں پر خرچ کریں گے، ایک غریبوں کیلئے بجٹ بڑھا کر100ارب سے 192ارب کردیا،اور دوسرے وہ لوگ جو پاکستان کی بزنس کمیونٹی ہے۔اس حکومت سے زیادہ کوئی حکومت بزنس فرینڈلی نہیں ہے، کیونکہ ہم نے کاروبار کیلئے آسانیاں دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمرا ن خان کا اپنا کوئی بزنس نہیں ہے، وہ اپنے بچوں کیلئے کوئی بڑابزنس بنا کرنہیں چھوڑنا چاہتا،نہ ہی وہ اپنے خاندان کے لوگوں کونوکریاں دینا چاہتا ہے۔ 

Related Posts