loader

جب آپ ٹرمپ کے خلاف ٹویٹ کریں گے تو آپ کاکیا خیال ہے ٹرمپ

  • Created by: admin
  • Published on: 14 May, 2019
  • Category: News / Social
  • Posted By: Admin

Post Info

 لاہور آئی ایم سے قرضے کے حوالے سے جو قیاس آرائیاں شروع ہوئی تھیں وہ ابھی تک ختم نہیں ہو سکیں۔اپوزیشن سمیت ساری سیاسی جماعتیں حکومت کو آڑے ہاتھوں لے ہی رہی ہیں تاہم میڈیا نے بھی کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ہر شخص حکومت سے یہی تقاضا کرتا نظرآتا ہے کہ آئی ایم کے ساتھ کن شرائط کی بنا پر حکومت نے قرضہ لیا ہے اور اس قرضے کے عوض ملک و قوم پر اور کتنا بوجھ پڑنے والا ہے۔

اس میں کوئی شک نہیں کہ آئی ایم ایف نے قرضے کے حوالے سے کڑی شرائط عائد کی ہیں مگر ابھی تک ان شرائط کو ایوان میں یا قوم کے سامنے نہیں لایا گیا۔ آئی ایم ایف کی طرف سے ملنے والے قرضے پر لاگو کی گئی ممکنہ کڑی شرائط کے حوالے سے سینئر صحافی اور تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ جب آپ پنڈ کے چوہدری کو دھمکی دیں گے یعنی ٹرمپ کے خلاف ٹویٹ پر ٹویٹ کھیلیں گے،چھے ستمبر کی شاندار تقریب منائیں گے،انڈیا کے دو لڑاکو طیارے مار گرائیں گے تو آپ کا کیاخیال ہے کہ آپ کو معاف کر دیا جائے گا اور جوہری توانائی کاحامل ملک کے خلاف کچھ بھی اقدامات نہیں کیے جائیں گے۔

ٹرمپ کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالنے کے عوض آئی ایم ایف اور ٹرمپ آپ کے ساتھ رعایت کر جائیں گے ایسا کچھ نہیں ہوتا بلکہ ان معاملات کے جواب دھیرے سے اور سخت انداز میں دیے جاتے ہیں۔ارشاد بھٹی نے گفتگو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ یہ گریٹ وار کا حصہ ہے جس میں میدان تو ہمارا ہے مگر کھیلنے والے کوئی اور ہیں۔ جس طرح ملک میں احتساب کا نعرہ اور سبھی سیاسی جماعتیں باہم گھتم گتھا ہیں اس سے کوئی اور ہی کہانی بنتی نظر آ رہی ہے۔

اب آئی ایم ایف کے قرضے کے ساتھ ہمیں سخت شرائط میں باندھ کر اصل میں مفلوج کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ہمارا نیوکلیئر طاقت ہونا،دفاع میں تگڑا ہونا،دہشت گردی کے خلاف کامیاب جنگ لڑنااور سی پیک کے ساتھ ساتھ چین سے بہترین تعلقات وہ چیزیں ہیں جو دشمنوں اور امریکا کی آنکھ میں چبھ رہی ہیں اور انہی چیزوں کے تعصب میں وہ آئی ایم ایف کو ڈھال بنا کر ہم پر سختی کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

 

Related Posts